بلوچستانژوب ڈویژنسبی ڈویژنقلات ڈویژنکوئٹہ ڈویژنمکران ڈویژننصیر آباد ڈویژن

بلوچستان:شاہراوں پر موت کا رقص،جون میں 949حادثات، 109 افراد جاں بحق

بلوچستان میں ٹریفک حادثات معمول بن چکے،ہزاروں افراد عمر بھر کیلئے مفلوج

کوئٹہ(سہب حال)  بلوچستان میں آئے روز ٹریفک حادثات رونما ہوتے ہیں جس کی وجہ سے درجنوں بھر افراد  روڈ حادثات میں جاں بحق ہو جاتے ہیں جبکہ ان حادثات سے ہزاروں افراد عمر بھر کیلئے مفلوج ہوکر رہ جاتے ہیں، بلوچستان میں ٹریفک حادثات معمول کی بات بن چکی ہے،ایسا کوئی دن نہیں گزرتا جس دن بلوچستان کے کسی علاقے میں ٹریفک کا حادثہ رونما نہیں ہوتا، بلوچستان میں سب سے زیادہ افراد روڈ حادثوں کی وجہ سے ہلاک ہو جاتے ہیں۔

روزنامہ انتخاب کے مطابق بلوچستان کے سماجی کارکن نجیب یوسف زہری کے جمع کردہ اعداد و شمار میں بتایا گیا ہے کہ گذشتہ ماہ جون میں مختلف علاقوں میں ٹریفک کے 949 حادثات رونما ہوئے ہیں جس میں 109 افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے جبکہ 1433 زخمی ہوگئے جاں بحق اور  زخمیوں میں سات خواتین اور چار بچے بھی شامل ہیں

سماجی کارکن کے مطابق پچھلے دو مہینے کے حادثات میں صرف وہ حادثات شامل تھے جو کہ جان لیوا اور خطرناک تھے، لیکن اس مہینے جون میں بلوچستان یوتھ اینڈ سول سوسائٹی نے اپنے ریسرچ کو بلوچستان کے حادثات کو لے کے مزید بڑھا دیا ہے اور کچھ تفصیلات پی پی ایچ آئی کی جانب سے بھی ہم نے لی ہیں اور پچھلے مہینےکے کچھ حادثات ہم سے رہے گئے تھے جو اعداد و شمار میں شامل نہیں تھے سال بھر کی تفصیلات میں شامل کریں گے۔

  • رپورٹس کے مطابق اس ماہ خضدار میں 234 حادثات میں 13 افراد جانبحق جبکہ 336 زخمی ہوگئے

  • لسبیلہ وندر حب چوکی میں358 حادثات میں 16 افراد جانبحق جبکہ 445 زخمی ہوئے

  • کوئٹہ پشین میں 81 حادثات میں 13 افراد جانبحق جبکہ 117 زخمی ہوئے ہیں

  • سوراب قلات مستونگ میں 189 حادثات میں 14 افراد جانبحق جبکہ 310 زخمی ہوئے ہیں

  • چمن قلعہ عبدللہ مسلم باغ اور قلعہ سیف اللہ میں 12 حادثات میں 7 افراد جانبحق جبکہ 31 زخمی ہوئے

  • ،سبی ،بولان ،مچھ ،ڈیرہ مراد جمالی ،بختیارآباد ،نصیرآباد اورنوتال میں 20 حادثات میں 13 افراد جانبحق جبکہ 55 زخمی ہوئے

  • تربت ،پسنی ،گوادر، اور پنجگور تمپ میں 27 حادثات میں 17 افراد جانبحق جبکہ 67زخمی ہوگئے

  • نوشکی، چاغی، دالبندین ،خاران اور بیسیمہ میں 15 حادثات میں 11 افراد جانبحق جبکہ 38 زخمی ہوگئے

  • ژوب،ہرنائی سنجاوی، بادیزئی، شیرانی،دکی، چمالنگ اور لورلائی میں 13 حادثات میں 5 افراد جبکہ 34 زخمی ہوئے ہیں

بلوچستان میں شاہراہوں پہ جاری موت کے رقص پہ حکام بالا کی جانب سے کسی بھی قسم کی توجہ نہیں دی جارہی ہے۔دوسری جانب بعض زرائع ٹریفک حادثات کو خود ڈرائیوروں کی بےاحتیاطی اور لاپرواہی قرار دیتے ہیں جو خستہ حال و تنگ سڑکوں پہ انتہائی تیز رفتاری سے گاڑی چلاتے ہیں

ٹیگز
Show More

متعلقہ خریں

59 Comments

  1. Thanks a lot for providing individuals with an extraordinarily remarkable chance to read in detail from this website. It’s always so ideal and also packed with a lot of fun for me personally and my office friends to visit the blog no less than three times weekly to see the new tips you will have. Not to mention, I am just certainly satisfied considering the splendid thoughts you give. Some two facts on this page are undoubtedly the most beneficial I’ve had.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close