بلوچستان

اختر مینگل کے ساتھ معاہدے پر آج بھی قائم ہیں،شاہ محمود قریشی کا بیان

بی این پی کی علیحدگی کے بعد حکومتی اور اپوزیشن سطح پر سیاسی سرگرمیاں بڑھ گئیں

اسلام آباد(سہب حال) وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ اختر مینگل کے ساتھ معاہدے پر آج بھی قائم ہیں، وہ سمجھتے ہیں کہ اگر معاہدے پر پیش رفت نہیں ہوئی تو آئیں بات کرتے ہیں۔

وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے ’جیو نیوز‘ کے پروگرام ’جیو پاکستان‘ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کے لیے کچھ بھی پریشان کن نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ سیاست میں بات چیت جاری رہتی ہے، ہمیں کوئی پریشانی نہیں ہے، یہ سن کر ہمارے کرم فرما پریشان ہو جائیں گے کہ ہمیں کوئی پریشانی نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیئے

وزیرِ خارجہ نے کہا کہ اختر مینگل سے رابطہ کریں گے اور ان کا اطمینان اور تسلی بحال کرنے کی کوشش کریں گے، وہ سیاسی شخص ہیں، انہیں فیصلے کرنے کا حق ہے

انہوں نے کہا کہ اتحادیوں سے بات چیت چل رہی ہے، کورونا وائرس کی وباء کی وجہ سے میرا ملک سے باہر جانا کم ہوگیا ہے اور ورچوئل کانفرنس ہو رہی ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بیرونِ ملک جانا نہیں ہو رہا تو اب میں اتحادیوں کے معاملات کو خود دیکھوں گا، پاکستان کے مفادات کا دفاع کرنا آتا ہے اور ہم کریں گے۔

دوسری جانب ’’روزنامہ انتخاب‘‘  کےمطابق حکومت اختر مینگل کو منانے میں کامیاب نہ ہوسکی۔ اختر مینگل کے خدشات دور کرنے کے لیے حکومت نے مذاکراتی کمیٹی بنادی جو بی این پی سے رابطہ کر کے ان کے تحفظات دور کرے گی۔ اختر مینگل پھر ناراض ہوگئے، وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت مشاورتی اجلاس ہوا،اجلاس میں اسپیکرقومی اسمبلی اسد قیصر،وفاقی وزرا اسد عمر، پرویزخٹک، ،بابراعوان اوردیگر نے شرکت کی۔ بی این پی کے مطالبات پرابتک ہونی والی پیشرفت پروزیراعظم کو آگاہ کیا گیا۔ وزیراعظم نے پارٹی رہنماوں کو بی این پی مینگل سے رابطہ کرنے کا کہا اورتحفظات دورکرنے کے لیے شاہ محمود قریشی، پرویزخٹک،اسدعمراوراسد قیصر پر مشتمل کمیٹی بنادی۔ 

یہ بھی پڑھیئے

خیال رہے کہ دو دن قبل (نیشنل پارٹی مینگل کا حکومت سے علیحدگی کا اعلان) قومی اسمبلی میں اجلاس سے تقریر کرتے ہوئے سردار اختر مینگل نے تحریک انصاف اتحاد سے علیحدگی کا اعلان کیا تھا۔قومی اسمبلی اجلاس کے دوران خطاب کرتے ہوئے بی این پی مینگل کے سربراہ اختر مینگل نے کہا تھا کہ میں آج ایوان میں پی ٹی آئی حکومت سے علیحدگی کا اعلان کرتا ہوں انہوں نے کہا تھا کہ ہم ایوان میں موجود رہیں گے اور اپنی بات کرتے رہیں گے۔واضح رہے کہ اس سے پہلے گزشتہ روز بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سردار اختر مینگل اور سابق صدر آصف علی زرداری کے درمیان بھی ٹیلی فونک رابطہ ہوا ہے جس میں حکومت کارکردگی پر سخت تنقید کی گئی تھی۔چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی بھی سردار اختر مینگل سے ملاقات کرچکے ہیں جس میں انہوں نے بی این پی کے سربراہ کو منانے کی کوشش کی ۔ اور جبکہ جمیعت علما اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان اور سردار اختر مینگل کے درمیان ملاقات ہوچکی ہے جس کو سیاسی اور صحافتی حلقوں میں ایک خاص اہمیت دی جارہی ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ خریں

3 Comments

  1. Excellent goods from you, man. I have understand your stuff previous to and you’re just extremely excellent.
    I really like what you have acquired here, certainly like what you are stating and the way in which
    you say it. You make it entertaining and you still care for to keep it sensible.
    I cant wait to read much more from you. This
    is actually a great site.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close