بلاگپہلا صفحہ

قفسِ زندگی

قدیر بلوچ

بلوچستان میں کون سے شعبہ ہائے حیات کے افراد ہیں جنہوں نے سحر کی جستجو کی اور جبری گمشدگیوں کا سامنا نہ کیا ہو؟

کیا طلباء! کیا ڈاکٹر! کیا پروفیسر! الغرض ہر طبقہ برابر متاثر رہا

کسی کی مسخ شدہ لاش ملی تو کسی کی ماں اپنے لاڈلے بیٹے کا انتظار کرتے کرتے زندگی ہار بیٹھی, کسی کی بہن انتظار کے شعلوں سے راکھ بن گئی تو کسی کی بیٹی اپنے کعبہ کے دیدار کو ترستے دنیا سے روٹھ گئی

مگر انتظار کے معنی ہم کیا سمجھیں!

انتظار تڑپ ہے۔۔!

انتظار تپتی آگ ہے ۔۔!

انتظار زخم ہے۔۔!

شومئی قسمت زخمی بلوچستان کے زخم صدا ہریالے ہیں کوئی طبیب نہیں جو زخم دیکھے مرہم رکھے

یہ زخم

لادوا زخم
سہتے سہتے بلوچستان کو عشرے بیت چکے

چوٹیں سہتے بلوچستان کے وارث،لاپتہ افراد کے وارث کل جب شال میں جمع ہوئے تو زبان سے زیادہ ان

کی آنکھیں بولیں

کسی کی آنکھیں ٹھنڈک تلاش کرتے کرتے بینائی سے محروم ہوچکی تھیں مگر آنکھیں بول رہی تھیں آنکھیں چلا رہی تھیں آنکھوں میں ناامیدی اب بھی نہیں

آنکھوں میں انتظار

آنکھوں میں آنسو

آنکھوں میں زخم!

جب سفید خون جسموں نے آنکھوں سے ٹپکتے سرخ آنسو دیکھے تو وہ بھی گویا ہوئے "کیا شال پھٹا نہیں؟

کوئی بولا  "کیا شال نے سہنا سیکھ لیا  ؟

کوئی چلایا  "خدا تیرے شال میں یہ تماشہ کیسا ؟ 

کسی نے کہا "کیا خدا دیکھ رہا ہے؟

کوئی بولا” آج شال برس رہا ہے”

کوئی کہہ رہا تھا”اگر شال زندہ ہے تو آج کے بعد شال کو نیند حرام ہے”

شال نے تو اپنے حصے کا دیا جلا دیا شال کی سڑکوں پر مہلب،سمی،سیما،ماہ رنگ،حسیبہ کا
نوحہ شال کی ہواؤں نے ہر سمت پھیلا دیا

اب بادِ صبا نے ان آنسوؤں کو ان زخموں کو آنکھوں سے آنکھوں میں منتقل کردیا اب یہ ان  پر منحصر ہے کہ کیسے تلاطم خیز موجوں سے نبردآزما ہوں شہرِ خموشاں کو جگائیں اور زندگی کے زندانوں کو زوال آئے

بقول سعید مزاری

بار زیند ءِ اے گرانیں شہ مئے زیرغ ءٓ
زیرغی استیں,تھانرگا کناں زیندغاں

عبدالقدیر بلوچ کا تعلق تحصیل کوہ سلیمان ڈیرہ غازیخان سے ہے۔بہاوالدین زکریہ یونیورسٹی ملتان میں ڈاکٹر آف وٹرنری میڈیسن کے شعبہ میں زیر تعلیم ہیں۔لکھنے کا عمل مشکل ہی سہی لیکن اس کے آگے جذبہ اور جنون تمام حائل رکاوٹیں دور کردیتا ہے۔اسی جذبے کے تحت اپنی پڑھائی کے ساتھ ساتھ آرٹیکلز لکھنے کا فن بھی بخوبی نبھا رہے ہیں۔ عبدالقدیر بلوچ
 لکھاری کی تحریر  اس کی ذاتی ہے۔’’ سہب حال ڈاٹ کام ‘‘ کی پالیسی کا اس سے متفق ہونا ضروری نہیں
ٹیگز
Show More

متعلقہ خریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close