پاکستانسوشل میڈیاکرونا وائرس

کرونا وائرس،حکومت کی ڈھیل اور شہریوں کی غیر سنجیدگی نے سیلبریٹیز کو پریشان کردیا

مانیٹرنگ ڈیسک(سہب حال)

کرونا وبا سے بچنے کا صرف ایک ہی راستہ،سماجی فاصلہ 

جہاں دنیا بھر میں کرونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے وہاں پاکستان میں بھی اس وائرس کے پھیلاؤ میں تیزی سے اضافہ ہوتا جارہا ہے۔جب سے حکومت نے لاک ڈاؤن میں نرمی کی ہے لوگ اس صورتحال کو بالکل بھی سنجیدہ نہیں لے رہے۔جس کی وجہ سے کرونا وائرس پھیلنے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔اس وائرس کا ایک ہی حل ہے سماجی دوری 

لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد شہریوں نے سماجی فاصلہ رکھنے اور ایس او پیز کی دھجیاں بکھیر دیں
لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد شہریوں نے سماجی فاصلہ رکھنے اور ایس او پیز کی دھجیاں بکھیر دیں

اس حوالے سے پاکستان شوبز اسٹارز سمیت معروف شخصیات کی جانب سے برہمی کا اظہار بھی کیا جا رہا ہے۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان وسیم اکرم کی اہلیہ نے لاک ڈاؤن میں سماجی دوری کو غیر سنجیدگی سے لینے کے حوالے سے ایک ٹوئٹ کی ہے۔شنیرا اکرم نے لکھا کہ ‘ٹریفک سے جام سڑکیں،مارکیٹیں اور سڑکوں پر سیکڑوں بغیر ماسک پہنے لوگ، یہ ملک مجھے رولانا چاہتا ہے۔

پاکستان شوبز انڈسٹری کی اداکارہ اشنا شاہ نے اپنی ایک ٹوئٹ میں لکھا ہے  کہ ‘ہاں اب سب کھل چکا ہے لیکن ہمیں سماجی دوری اختیار کرنے کی کوشش کرنی چاہیے، چپکیں مت اور محفوظ رہیں۔

اداکارہ صنم سعید نے بھی اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے ٹوئٹ میں لکھا کہ ‘کیا ہمیں واقعی عید کی شاپنگ کے لیے مارکیٹ جانا ضروری ہے؟صنم سعید نے لوگوں کو احتیاط سے باہر جانے کے ساتھ ساتھ یہ بھی کہا کہ کیا ایسا ہو سکتا ہے کہ اس بار عید کو مختلف طریقے سے منانے کی کوشش کی جائے۔

کورونا وائرس سے بچاؤ کےلئے کئے گئے لاک ڈاؤن سے شہریوں کی غیر سنجیدگی پر جہاں سیلبریٹیز پریشان دکھائی دیتے ہیں جسکا اظہار انہوں اپنے ٹیوٹر اکاونٹ پر کیا ہے وہاں لوگوں نےجواباؐ اپنی رائے کا اظہار بھی کیا ہے۔گڑیا صدیقی نامی ٹیوٹر اکاونٹ ہولڈر نے صنم سعید پر تنقید کا اظہار کچھ یوں کیا ہے۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان وسیم اکرم کی اہلیہ کے ٹیوٹ پر ایک صارف کا کہنا ہے کہ ’’بھابی جان یہ ہے پاکستان‘‘

دوسری جانب پنجاب حکومت نے لاک ڈاؤن میں مزید نرمی کرتے ہوئے شاپنگ مالز کھولنے اور پبلک ٹرانسپورٹ کی اجازت دینے کا بھی فیصلہ کرلیا۔

ملک بھر میں 9 مئی سے لاک ڈاؤن مرحلہ وار نرم کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا جس کے بعد چھوٹی مارکیٹوں کو کھولنے کی اجازت دی گئی جب کہ اس دوران جمعہ، ہفتہ اور اتوار مکمل لاک ڈاؤن کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے جس کے تحت ہفتے کے تین روز کاروبار مکمل بند رہیں گے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ خریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close