بلوچستانپاکستانپہلا صفحہعالمی منظر

جرمنی:برمش یکجہتی کمیٹی کا سانحہ ڈنک کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

سہب حال (مانیٹرنگ ڈیسک)

جرمنی میں سانحہ ڈنک کے خلاف احتجاجی مظاہرہ،خواتین اور بچوں کی شرکت

جرمنی کے شہر برلن میں برمش یکجہتی کمیٹی کا سانحہ ڈنک کیخلاف  احتجاجی مظاہرہ

سانحہ ڈنک سمیت بلوچستان بھر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق آگاہی 

مظاہرے کے شرکاء نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اُٹھارکھے تھے جن پر مختلف نعرے درج تھے

بلوچستان میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو روکنے کے لیے عالمی ادارے فوری طور پر اقدامات اُٹھائیں،مطالبہ

ڈنک سانحہ عید کے دوسرے دن بلوچستان کے شہر تربت میں پیش آیا تھا مسلح افراد نے گھر میں گھس کر خاتون کو قتل جبکہ اس کی بچی کو زخمی کردیا تھا۔دلخراش واقعے کیخلاف بلوچستان بھر میں احتجاجی مظاہروں اور ریلیوں کا انعقاد کیا گیا۔بلوچستان کے اکثریت شہروں،تونسہ،راجن پور،کراچی،لاہور اور اسلام آباد میں بھی زخمی برمش کو انصاف دلانے کے لیے احتجاج کیا گیا۔

یہ بھی پڑھئیے

ڈنک واقعہ کے خلاف سوشل میڈیا میں بھی سخت ردعمل دیکھنے میں آیا اور غم و غصے کا اظہار کیا گیا ۔حکومت اور سیاسی پارٹیوں کو سخت تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔یاد رہے کہ برمش بلوچ کے لئے انصاف کی آواز پر ریلی سب سے پہلے گوادر میں نکالی گئی اور برمش بلوچ کو انصاف فراہم کرنیکا مطالبہ کیا گیا۔اس ریلی کے بعد برمش کے ساتھ اظہار یکجہتی کےلئے بلوچستان بھر میں پر امن ریلیاں اور جلسے جلوس نکالے جارہے ہیں

یہ بھی پڑھئیے

ڈنک کا انسانیت سوز واقعہ ، ملک ناز کی شہادت اور برمش کے زخمی ہونے کے واقعہ اور قاتلوں کی عدم گرفتاری ، قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانبداری کیخلاف بی این پی کے رہنما  ثناء بلوچ نے واقعہ کے دوسرے روز  بلوچستان اسمبلی میں تحریک التوا جمع کرائی تھی

بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ و رکن قومی اسمبلی سردار اختر جان مینگل نے قومی اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ معصوم بچی برمش اور اس کی والدہ کا کیا قصور تھا صرف گرفتاری سے انصاف نہیں ملے گا اس طرح کے واقعات اور بھی بہت سے ہوئے ہیں بدقسمتی سے بلوچستان کا شاید ہی کوئی ایسا ضلع بچا ہو جہاں بچے یتیم نہ کئے گئے ہوں

نیشنل پارٹی کے سینیئر نائب صدر سینیٹر میر کبیر احمد محمدشہی نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے  کہا کہ سانحہ ڈنک کے خلاف آج پورا بلوچستان سراپا احتجاج ہے۔ مزاحمت پر بی بی ملکناز کو شہید اور معصوم برمش کو شدید زخمی کردیا گیا۔ ہماری روایات میں خواتین کا بہت اونچا مقام رہا ہے اور جاکر ہماری انہی عورتوں کو گولیوں سے چھلنی کیا جا رہا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ خریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close