بلوچستانپہلا صفحہکوئٹہ

کوئٹہ:طلبہ کے مظاہرے کی کوریج پر صحافی زبیر بلوچ گرفتار

پرامن احتجاجی ریلی نکالنے طلبہ پابند سلاسل کیا گیا،بلوچ سٹوڈنٹس الائنس

مظاہرے کے کوریج کے دوران انتخاب کے رپورٹر زبیر بلوچ کو پولیس نے گرفتار کرلیا

کوئٹہ (سہب حال) تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں طلباء تنظیموں کی جانب سے آن لائن کلاسز کے خلاف احتجاج کو لائیو کوریج کرنے کے دوران روزنامہ انتخاب کے رپورٹر کو پولیس نے تشدد کرکے گرفتار کرلیا بعدازاں انہیں سٹی تھانے منتقل کردیا

واضح رہے انتظامیہ اور سیکورٹی اہلکاروں کی جانب سے صحافیوں پر تشدد کے کئی واقعات سامنے آئے ہیں گزشتہ دنوں بلوچستان کے علاقے چمن کے دو صحافیوں کو تشدد کرکے راتوں رات چمن سے کوئٹہ کوئٹہ سے مچھ جیل منتقل کردیا گیا تھا

جہاں انہیں مچھ جیل کی تاریخی کوٹھی نمبر 9 میں رکھا گیا اور انہیں تشدد کا نشانہ بنایا گیا

 کوٹھی نمبر 9میں انگریز دور کے بعد حکم عدولی کرنے والے ملزمان کو رکھا جاتا ہے اس واقعے کیخلاف ملک بھر کے صحافیوں نے احتجاج بھی کیا

روزنامہ انتخاب کے رپورٹر زبیر بلوچ کو دوران لائیو کوریج گرفتار کیا گیا انہوں نے اپنا تعارف بھی کرایا مگر سیکورٹی اہلکاروں نے تشدد کا نشانہ بنا کرانہیں تھانہ منتقل کردیا۔

بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کے فیس بک پیج کے مطابق کوئٹہ پولیس کیجانب سے ہائر ایجوکیشن کمیشن کے فیصلے کیخلاف پرامن احتجاجی ریلی نکالنے پر بلوچ سٹوڈنٹس الائنس کے کارکنوں کو پابند سلاسل کیا گیا. ضلعی انتظامیہ کا پرامن طالبعلموں کو حراس کرنا اور سُلاخوں کے پیچھے دھکیلنا قابلِ مذمت عمل ہے.

ٹیگز
Show More

متعلقہ خریں

13 Comments

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close